Khabardar E-News

افغانستان سے متعلق دو روزہ وزرائے خارجہ اجلاس 30 مارچ کو بیجنگ میں شروع ہوگا

4

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

بیجنگ ( خبردار ڈیسک ) چینی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ سربراہی اجلاس کا مقصد اس نازک وقت میں افغانوں کے لیے بین الاقوامی حمایت میں اضافہ کرنا ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وین بین نے 28 مارچ کو بیجنگ میں ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ اس اجلاس میں افغانستان کے ہمسایہ ممالک کے وزرائے خارجہ اور نمائندوں نے شرکت کی اور اس میں افغانوں کے لیے انسانی امداد پر توجہ مرکوز کی جائے گی۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان، ایران، روس، تاجکستان، ترکمانستان اور ازبکستان کے وزرائے خارجہ بھی اس اجلاس میں شرکت کریں گے، جو مشرقی چینی صوبے آنہوئی کے شہر تونزی میں منعقد ہوگا۔

دریں اثنا، پاکستان کی وزارت خارجہ نے کہا کہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اجلاس میں شرکت کریں گے۔
چین کے سٹیٹ کونسلر اور وزیر خارجہ وانگ یی کی دعوت پر وزیر خارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی 29-31 مارچ 2022 کو افغانستان کے ہمسایہ ممالک کے وزرائے خارجہ کے تیسرے اجلاس میں شرکت کے لیے چین کا دورہ کر رہے ہیں۔
وزیر خارجہ شریک ممالک کے ہم منصبوں سے بات چیت کریں گے۔
یاد رہے کہ پاکستان نے ستمبر 2021 میں پڑوسی ممالک کے فارمیٹ کا آغاز کیا تھا جس کا مقصد افغانستان کی صورتحال پر علاقائی نقطہ نظر کو تیار کرنا ہے۔
پاکستان نے 8 ستمبر 2021 کو پڑوسی ممالک کے وزرائے خارجہ کے پہلے اجلاس کی میزبانی کی۔
پاکستان خطے میں پائیدار امن اور استحکام کو فروغ دینے کے لیے افغانستان کے بارے میں علاقائی نقطہ نظر کی مکمل حمایت کرتا ہے۔
پاکستان ایک پرامن، مستحکم، خودمختار، خوشحال افغانستان کے مشترکہ مقاصد کو آگے بڑھانے کے لیے عالمی برادری کی کوششوں کی حمایت جاری رکھے گا۔

دو روزہ اجلاس سے ایک روز قبل چینی وزارت خارجہ کے ترجمان وانگ وین بن نے آج (29 مارچ) کو ایک نیوز کانفرنس میں بتایا کہ افغانستان کے لیے امریکہ کے خصوصی ایلچی ٹام ویسٹ بھی اس میں شرکت کریں گے۔
انہوں نے کہا کہ اجلاس کی صدارت چینی وزیر خارجہ وانگ یی کریں گے۔

اجلاس میں قطر اور انڈونیشیا کے وزرائے خارجہ بھی بطور مہمان خصوصی شرکت کریں گے۔

Comments are closed.