Khabardar E-News

ججوں کا بھی احتساب ہونا چاہیے،جسٹس اطہر من اللہ

63

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

اسلام آباد ( خبردار نیوز ) سپریم کورٹ کے جج جنا ب جسٹس اطہرمن اللہ نے کہا ہے کہ ان ججوں کا بھی

احتساب ہونا چاہیے جنہوں نے ماضی میں مارشل لاء کو راستہ دیا ہے

یہ بات انہوں نے آج  پرویز مشرف سنگین غداری کیس میں وکیل رشید اے رضوی کو مخاطب کرتے ہوے کہا کہ ہمیں سچ بولنا چاہیے

اس سے اگر کسی فیصلے کوختم ہونا ہے تو اسے ہونا چاہیے،جس نے مارشل لاء کو راستہ دیا،ان ججوں کا بھی

احتساب ہونا چاہیے،

جسٹس اطہر من اللہ نے کہا کہ ماضی میں جو ہو چکا اسے میں ختم نہیں کرسکتا

اس موقع پر چیف جسٹس قاضی فائز عیسی   نے استفسار کیا کہ کیا ساوتھ افریقہ میں سب کو سزا ہی دی گئی تھی؟ اگر ہم نے قوم بننا ہے تو ماضی

کو دیکھ کر مستقبل کو ٹھیک کرنا ہہوگا

کیونکہ سزا اور جزا کا یہ عمل اوپر بھی جائے گی اگر درست سمت نہ چلے تو کئی بار قتل کے مجرمان بھی

بچ نکلتے ہیں

چیف جسٹس نے سوال کیا کہ کوئی وکیل آکر بتائیں کہ آئین توڑنے والے ججوں کی تصویریں ہی یہاں کیوں لگی ہیں

اور جج ہی یہاں بیٹھ کر کیوں پوائنٹ آوٹ کریں

انہوں نے کہا کہ میڈیا بھی زمہ دار ہے ان کا بھی احتساب ہوناچاہیےبتائیں ناکتنے صحافی مارشل لاء کے حامی

کتنے خلاف تھے؟

اس موقع پر جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوے کہا کہ ہمیں تاریح سے سیکھنا چاہیے بچوں کو بھی سیکھانا چاہیے

اور ہماری تاریخ پھر یہ ہے کہ جب کوئی مضبوط ہوتا ہے اس کے خلاف کوئی نہیں بولتا،

اور جب طاقتور کمزور پڑھ جاتا ہے تو اس کے بعد عاصمہ جیلانی والا فیصلہ آجاتا ہے،

Comments are closed.