Khabardar E-News

ہرنائی : زرغون غرگھاٹہ کوئلہ کان دھماکہ میں دبے 3 مزدور 5 دن بعد زندہ پاہیے گئے

7

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ ( خبردار نیوز ) ہرنائی اور کوئٹہ کے درمیانی علاقے زرغون غر گھاٹہ میں 22 مارچ کو کوئلہ کان میں

دھماکہ ہوا تھا جس کے نتیجے میں پھنس جانے والے 3 کان کنوں آج 5 وین روز بعد زندہ نکالیا گیا

جس پر وہاں موجود کانکنوں اور انتظامیہ میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور اس سے ایک مجزہ قراد دیا ہے

بتاگیا ہے کہ پانچ روز کے جد وجہد کےبعد تین کان کنوں کوزندہ حالت میں نکالیا گیا

چیف انسپیکٹر مائن بلوچستان عبدالغنی شاہوانی نے خبردار نیوز کو بتایا کہ تینوں کانکوں کی حالت خطرے سے

باہرہے-

ہرنائی : زرغون غرگھاٹہ کوئلہ کان دھماکہ میں دبے 3 مزدور 5 دن بعد زندہ پاہیے گئے

تاہم علاج معالجہ کے لیے تینوں کان کنوں کو ہسپتال منتقل کیا جارہا ہے –

انکے مطابق امدادی کاموں میں مقامی کوئلہ کان کنوں کے علاوہ ضلعی انتظامیہ ہرنائی ، پی ڈی ایم اے توخئ

فاونڈیشن اور دیگر اداروں نے ایم کردار ادا کیا

اس بار ے میں ڈپٹی کمشنر ہرنائی سردار رفیق ترین نے اب سے تھوڑی دیر قبل خبردار نیو ز کو بتایا کہ زندہ

بچ جانے والے کان کنوں کی آمد پر دیگر کانکنوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی اور پورے علاقے میں جشن کا

سماں ہیں

انہوں نے کہا کہ نکالنے کانکوں کی حالت تشویشناک مگر خطرے سے باہر ہے –

ہرنائی:کوئلہ کان گیس دھماکہ سے دب جانے والے3 کانکن 5 دن بعد بھی نہ نکال سکے

جنکی علاج معالجہ کے لیے تمام میڈیکل اور دیگر سہولیات فراہم کی جارہی ہے –

سردار رفیق ترین نے بتایا کہ امدادی کاموں میں پاک فوج ، ایف سی اور مقامی قبائل نے بھی بڑچڑکر حصہ لیا

دوسری جانب سیکرٹری مائن اینڈ لیبرسید ظفر علی بخاری نے ہفتہ کے روز خود موقع پر جاکر امدادی کاموں

کی نگرانی کی

اس پر بلوچستان میں کوئلہ کان لیبر کے مرکزی صدر سلطان لالا نے مسرت کا اظہار کرتے ہوے کہا کہ تینوں

کانکوں کا 5 روز بعد بھی زندہ بچ جانا ایک معجزے سے کم نہیں ہے

یاد رہے کہ ضلعی ہرنائی کے علاقے زرغون غرگھاٹہ میں 22مارچ کوگیس کے باعث دھماکہ سے کان بیٹھ

گئی تھی

جس کے باعث 11 سو فٹ نیچھے3 کانکن پھنس گئے تھے

Comments are closed.