Khabardar E-News

کوئٹہ: وزیراعلی قدوس بزنجو کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر اسمبلی اجلاس طلب

6

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ ( خبردار نیوز ) بلوچستان اسمبلی کا اجلاس بروز جمعرات 26 مئی کو ہوگا،

قائمقام سیکرٹری اعظم بلوچ کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ اجلاس کے دوران

اسمبلی احاطہ میں مسلح گارڈز کا داخلہ ممنوع ہوگا،

جس کے مطابق 26 مئی صبح 10 بجے کے اجلاس میں تحریک عدم اعتماد پیش کی جائیگی

یاد رہے سابق وزیر اعلی بلوچستان جام کمال نے 18 مئی کو وزیر اعلیٰ قدوس بزنجو کےخلاف تحریک عدم

اعتماد جمع تھی

یہ تحریک سابق وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال پی ٹی آئی کے پارلیمانی لیڈر سردار رند اور عوامی نیشنل

پارٹی کے پارلیمانی لیڈر اصغر اچکزئی نے جمع کرائی تھی

وزیر اعلیٰ قدوس بزنجو کے خلاف جمع کرائی گئی تحریک عدم اعتماد پر 14 اراکین کےدستخط تھے

جس میں پی ٹی آئی کے سردار رند فریدہ بی بی سمیت عوامی نیشنل پارٹی کے 3 ارکان شائینہ کاکڑ ، نعیم

بازئی کے دستخط بھی شامل تھے

جس پر حکومت نے فوری کار وائی کرتے ہوے نہ صرف دوصوبائی وزرا ء نوابزادہ طارق مگسی اور پی ٹی

آئی کے مبین خلجی کے علاوہ بلوچستان عوامی پارٹی کے مٹھا خان کاکڑ ،

کوئٹہ: وزیراعلی قدوس بزنجو کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر اسمبلی اجلاس طلب

شائدنہ کاکڑ ، نعیم بازئی سے انکے عہدے لیکر انہیں سبکدوش کردیا تھا

تاہم بعد نوابزادہ طارق مگسی نے اپنے عہدے سے مستعفی ہوکر استعفی قائمقام گورنر میر جان محمد جمالی کو

پیش کیا تھا

جس کے بعد وزیراعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو اور کا بینہ کے دیگر ارکان کی جانب سے کہا گیا کہ

جام کمال کے پاس تحریک عدم اعتماد کے لیے اکثریت نہیں ہے

لیکن سابق وزیراعلی بلوچستان کی جانب سے تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کے لیے کوششیں جاری ہیں

اور منگل کو سابق وزیر اعلی بلوچستان جام کمال نے کوئٹہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوے کہا کہ بلوچستان

میں تحریک عدم اعتماد کا معاملہ چل نکلا، جسکا چرچا اس وقت پورے ملک میں ہے

انکےمطابق کہا جاتا تھا وزیر اعلی جام کمال کسی سے ملتے نہیں ہیں۔آج بلوچستان جل رہا ہے کسی کو فکر

جام کمال گروپ نے بجٹ کو نشانہ بنا کر تحریک عدم اعتماد جمع کی ہے۔ قدوس بزنجو

نہیں ھے۔

بقول جام کمال کے کہ ہماری عدم اعتماد میں موقف بلوچستان میں سیاسی اور گورننس کے ماحول کو ٹھیک

کرنا ہے

کیونکہ ظہور بلیدی نے استعفی کیوں دیا؟ کچھ پالیسیاں ایسی تھی جن کے وہ مخالف تھے۔

اور ہمیں اقتتدار کا شوق نہیں تحریک عدم اعتماد بلوچستان کے مفاد میں پیش کر رہے ہیں

یاد رہے بلوچستان اسمبلی میں ارکان کی تعداد 65 ہے اور تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کے لیے 33 ارکان

کی ضرورت ہے

Comments are closed.