Khabardar E-News

بلوچستان میں خواتین کےتحفظ کے لیےصوبائی کمیشن بنانے کا مطالبہ

7

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ ( خبردار نیوز ) بلوچستان میں خواتین کے حقوق کے لیے کام کرنے والے تنظیموں نے کہا کہ صوبے

میں خواتین پر تشدد اور ہراسمینت کو روکنے کے لیے صوبائی کمیشن بنایاجاے تاکہ کم عمری کی شادیوں کے

روک تھام کے ساتھ ان پر ہونے والے تشدد کے واقعات کا سدباب ہوسکے –

کوئٹہ پریس کلب عورتوں کے تحفظ کے لیے کام کر نے والی مختلف تنظیموں کی جانب سے خواتین کے قومی

دن کےسلسلے میں ایک سمینار کا انعقاد کوئٹہ کیا گیا

جس میں زندگی کے مختلف شعبوں میں کام کرنے والی خواتین نے بڑی تعداد نے شرکت کی –

سمینار میں خواتین کے تحفظ کے لیے پروانشل کمیشن بنانے کے ساتھ کم عمری کی شادی پر قانون سازی کا

مطالبہ ایک بارپھرسامنے

بلوچستان میں خواتین کےتحفظ کے لیےصوبائی کمیشن بنانے کا مطالبہ

بلوچستان عوامی پارٹی کی خاتون رئنما ثناء درانی کا کہنا تھا کہ بلوچستان میں زندگی کے ہرشعبے میں خواتین

کو پسماندہ رکھا گیا ہے

سمینار میں زیادہ ترمقررین نے بلوچستان حکومت پرزور دیا کہ وہ خواتین کے حقوق کے تحفظ کے لیے اپنا

مرکزی کردار ادا کرنا چاہئے

یو این وویمن کی خاتون لیڈر عائیشہ ودود نے کہا کہ خواتین کے مسائل کے لیے صوبائی سطع پر کام کرنے

والے سرکاری محکموں کو متحرک ہونے کی اشدضرورت ہے

شرکاء کی جانب سے دس نکاتی مطالبے پر مشتمل ایک قراد داد پیش کی اور کہا گیا کہ صوبے میں خواتین کی

حالت بہتری کے لیےان نقات پر عمل ضروری ہے

عورت فاونڈیشن کے صوبائی کوارڈی نیٹر علاوالدین خلجی نے کہا کہ آئندہ بلدیاتی اداروں میں خواتین کا کوٹہ

بڑھانے کی ضرورت ہے اور اس سے 33 فیصد سے بڑھا کر50 فیصد کردی چاہیے

اس موقع پر گورنربلوچستان کے ترجمان نذیر اچکزئی نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی مرکزی حکومت

خواتین کے حقوق اور تحفظ کے لیے زندگی کے ہر شعبے میں اقدامات کیے ہیں

سمینار کے شرکاء کے مطابق بلوچستان میں حالیہ برسوں کے دوران خواتین پر گھریلو تشدد کے واقعات میں نہ

صرف اضافہ ہوا بلکہ کم عمری کی شادیوں کی وجہ زچکی کے دوران اموات بھی بڑ چکے ہیں

1 Comment
  1. […] بلوچستان میں خواتین کےتحفظ کے لیےصوبائی کمیشن بنانے کا… […]

Comments are closed.