Khabardar E-News

کوئٹہ : میڈیکل کالجز طلباء دھرنا اور بھوک ہڑتال ختم، احتجاج جاری

14

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ ( خبردار ڈیسک ) بلوچستان کے میڈیکل کالجز کے طلباء نےدھرنا اور بھوک ہڑتال ختم کرنے کا اعلان

کیا ہے

رات گئے حکومت بلوچستان اور میڈیکل کالجز کے طلباء کے درمیان مزکرات کامیاب کے ساتھ اختتام پذیر

ہوے

کمشنر کوئٹہ ڈویژن سہیل رحمان نے طلباء کو وزیراعلی کی جانب سے سیکریٹری صحت کو ارسال کیے

جانے والے مراسلے کی کاپی دی

جس پر میڈیکل طلباء نے یقین دہانیوں کے بعد تادم مرگ بھوک ہڑتال اور جاری دھرنے کو ختم کردیا

کمشنر کوئٹہ سہیل الرحمان بلوچ نے 5 طلبہ کو جوس پلاکر تادم مرگ بھوک ہڑتال ختم کرائی

دھرنے میں شامل طلبہ کاکہنا ہے کہ :حکومت نے تحریری طور پر یقین دہانی کرائی ہے کہ جلد انکا

رجسٹریشن کا مسلئہ حل کرلیا جائے گا، تاہم پریس کلب کے سامنے احتجاجی کیمپ پی ایم سی کی جانب سے

نوٹیفیکشن جاری ہونے تک جاری رہے گا

کوئٹہ : میڈیکل کالجز طلباء دھرنا اور بھوک ہڑتال ختم، احتجاج جاری

دوسری جانب وزیر اعلی بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے کہا ہے کہ لورالائی ،تربت اور خضدار میڈیکل

کالجز کے طلباء کی پی ایم سی سے رجسٹریشن کو یقینی بنانے کے لئے ہر ممکن کوششیں جاری ہے،

وزیر اعلیٰ اس سلسلے میں سیکریٹری صحت کو مراسلے بھجوانے کی ہدایت کی اور کہا کہہ محکمہ صحت پی

ایم سی کے سامنے میڈیکل طلباء کی رجسٹریشن کے کیس کو جامع اور موثر طور پر پیش کرنے کی بھرپور

تیاری کرے ،

تاکہ ہمارے میڈیکل کے طلباء کی پڑھائی اور محفوظ مستقبل میں کوئی رکاؤٹ پیدا نہ ہو.

واضع رہے کہ بلوچستان کے تین میڈیکل کالجز لورالائی ، خضدار اور مکران کے طلبہ وطالبا ت نے گذشتہ

80 دنوں سے کوئٹہ میں احتجاج شروع کیا تھا

 

ان کامطالبہ کے پاکستان میڈ یکل کمیشن کی جانب انکی بطور میڈ یکل طالب رجسٹریشن کی جاے جس کے لیے

انکا گذشتہ ایک ہفتے سے بھوک ہڑتال بھی جاری تھا

یاد رہے کہ پی ایم سی نے ان طلبہ سے ایک ٹیسٹ دینے کو کہا ہے جس کے لیے یہ طلبہ تاحال تیار نہیں ہیں

Comments are closed.