Khabardar E-News

پہلی باراحتساب کاعمل سیاسی مداخلت سے آزاد ہے،عمران خان

188

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

پوری توجہ کشمیر کاز پر مورکوز ہے،جنرل اسمبلی میں خطاب اہم ہو گا، دنیا نے دیکھ لیا بھارت مقبوضہ کشمیر میں حالات نارمل ہونے سے متعلق جھوٹ بولتا رہا،حکومتی ترجمانوں کے اجلاس سے خطاب
پاکستان کشمیریوں کی ہر فورم حمایت جاری رکھے گا، 27 ستمبر کو کشمیر کا سفیر بن کر جنرل اسمبلی میں خطاب کروں گا، موجودہ حکومت کی کوششوں کی بدولت مسئلہ کشمیر عالمی سطح پر اجاگر ہواہے
ڈیل کی خبریں پھیلانے والوں کو مایوسی ہو گی،احتساب کا عمل جلد قوم کے سامنے مثبت ثمرات لائے گا،پہلی بار کامیاب خارجہ پالیسی کے باعث پوری دنیا میں کشمیر کا مقدمہ سنا گیا،بابراعوان سےگفتگو
اسلام آباد (این این آئی) وزیر اعظم عمران خان نے ایک بار پھر واضح کیا ہے کہ پاکستان کشمیریوں کی ہر فورم حمایت جاری رکھے گا۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت حکومتی رہنماؤں اور ترجمانوں کا اجلاس ہوا جس میں وزیراعظم نے مقبوضہ کشمیر سے متعلق بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہاکہ دنیا نے دیکھ لیا بھارت مقبوضہ کشمیر میں حالات نارمل ہونے سے متعلق جھوٹ بولتا رہا۔ وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان کشمیریوں کی ہر فورم حمایت جاری رکھے گا۔انہوںنے کہاکہ 27 ستمبر کو کشمیر کا سفیر بن کر جنرل اسمبلی میں خطاب کروں گا۔ وزیراعظم نے کہاکہ موجودہ حکومت کی کوششوں کی بدولت مسئلہ کشمیر عالمی سطح پر اجاگر ہوا، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے سفارتی رابطوں سے اجلاس کو آگاہ کیا۔ ذرائع کے مطابق شاہ محمود نے کہاکہ دنیا کو بتادیا بھارت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق پامال کررہا ہے۔انہوںنے کہاکہ وزیراعظم کی زیر صدارت ترجمانوں کا اجلاس 2 گھنٹے تک جاری رہاعلاوہ اذیں وزیراعظم عمران خان نے ایک بار پھر ڈیل کی خبریں مسترد کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ ’’نو ڈیل ٗ نو کمپرو مائز ،احتساب کا عمل جاری رہے گا ،پوری توجہ کشمیر کاز پر مورکوز ہے،جنرل اسمبلی میں خطاب اہم ہو گا۔ وہ پیر کو بابر اعوان سے ملاقات کے دور ان بات چیت کررہے تھے ۔ دونوں رہنمائوں نے ملکی موجودہ سیاسی صورت حال پر مشاورت کی اور حکومت کے آئینی اور قانونی معاملات پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔وزیراعظم کی امریکہ اور سعودی عرب کے دورے پر بھی مشاورت کی گئی ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ پوری توجہ کشمیر کاز پر مورکوز ہے, جنرل اسمبلی میں خطاب اہم ہو گا۔ وزیراعظم نے کسی بھی قسم کی ڈیل کے امکانات کو ایک بار پھر مسترد کر دیا۔ وزیر اعظم نے دو ٹوک موقف اختیار کیا کہ ’’نو ڈیل نو کمپرومائز‘‘۔ وزیر اعظم نے کہاکہ احتساب کا عمل اسی طرح جاری رہے گا،پہلی مرتبہ احتساب کا عمل سیاسی مداخلت سے آزاد ہے۔ وزیراعظم نے کہاکہ احتساب کا عمل شفاف اور با لاگ ہے۔ بابر اعوان نے کہاکہ کشمیر کے معاملے پر حکومت کی جارحانہ حکمت عملی درست اقدام ثابت ہوا،پہلی بار کامیاب خارجہ پالیسی کے باعث پوری دنیا میں کشمیر کا مقدمہ سنا گیا۔بابر اعوان نے کہاکہ ڈیل کی خبریں پھیلانے والوں کو مایوسی ہو گی،احتساب کا عمل جلد قوم کے سامنے مثبت ثمرات لائے گا

Comments are closed.