Khabardar E-News

کوئٹہ : میڈیکل کالجز طلبہ کا احتجاجی ریلی،اسٹیچرز پربھوک ہڑتالیوں کی شرکت

27

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ ( خبردار نیوز ) بلوچستان کے مختلف میڈیکل کالجز کے طلباء کا انوکھا احتجاج کا راستہ اپنالیا ہے

اور جمعرات کو کوئٹہ پریس کلب کے سامنے سے میڈیکل طلباء نے بھوک ہڑتال پر بیٹھے طلباء کو اسٹیچرز

پر لیٹا کر ریلی نکال لی

ریلی سے قبل میڈیکل طلباء کا بھوک ہڑتالی کمیپ سے ریڈزون جانے اور احتجاجی کیمپ کو منتقل کرنےکا

اعلان کیا تھا

اور کہا کہ بھوک ہڑتال پر بیٹھے طلباء کو اسٹیچرز پر لیٹا کر ریڈزون کی جانب مارچ کرینگے۔

احتجاج میں شامل ان طلباء کا کہنا ہے کہ ہم مرنے کیلئے تیار ہیں اور صوبائی حکومت ہمارے مطالبات پر

خاموش ہے۔

دوسری جانب ضلعی انتظامیہ کی جانب سے سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گٰئےئھے

اور ریلی اور ریڈون پر پولیس کی بھاری نفری موجود رہی

تاہم ریلی کو روانگی کے تھوڑی دیر بعد پولیس نے ریڈزون جانے سے روک لیا

اس دورارن طلباء پر پولیس کی جانب سے تشدد بھی ہوا

اور پولیس نے طلباء کو ریڈزون جانے سے روک دیا

جس پر میڈیکل طلباء کی جانب سے پولیس اور صوبائی حکومت کیخلاف شدید نعرے بازی کی گئی

اور اب یہ طلبہ ڈی سی آفس کے دفتر کے سامنے پہنچ چکے ہیں

جہاں انہوں نے اسٹیچرز پر موجود دیگرطلبہ کے ساتھ مل کردھرنا شروع کردیا ہے

کوئٹہ : میڈیکل کالجز طلبہ کا احتجاجی ریلی،اسٹیچرز پربھوک ہڑتالیوں کی شرکت

ان طلبہ کا مطالبہ کہ پاکستان میڈیکل کونسل  بلوچستان کے تین میڈیکل کالجز کے طلبہ کی رجسٹریشن کرے

تاہم پی ایم سی کا اب تک موقف ہے کہ مذکورہ کی رجسٹریشن ایک ٹیسٹ کے بعد کیا جاے گا جس کے لیے

احتجاج میں شامل طلبہ وطالبات اب تک تیار نہیں ہیں

 دوسری جانب دو دن قبل پاکستان میڈیکل کونسل  کا ایک اہم اجلاس اسلام آباد میں ہواتھا

اجلاس میں بلوچستان کے میڈیکل طلباء کی رجسٹریشن سے متعلق امور کا جائیزہ لیا گیا

اور اجلا س کی کاروائی انتہائی مثبت اور حوصلہ افزا رہی

چیف سیکریٹری بلوچستان مطہر نیاز رانا کی قیادت میں سیکریٹری صحت نورالحق بلوچ اور دیگر اراکین کی

ٹیم نے میڈیکل طلباء کا کیس اور موقف مفصل طریقے سے بھرپور طور پر پیش کیا

کونسل کے اراکین نے بلوچستان کے موقف کو سنا اور تمام امور کا تفصیلی جائیزہ لیتے ہوۓ بعض درکار

دستاویزات طلب کیں

اجلاس میں طے پایا کہ بلوچستان حکومت متعلقہ دستاویزات پیش کریگی اور کونسل کا آئیندہ اجلاس دس دن بعد

دوبارہ منعقد ہو گا

واضع رہے کہ کونسل کا اجلاس وزیراعلئ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو کی دلچسپی اور کوششوں کے نتیجہ

میں منعقد ہوا.

Comments are closed.