Khabardar E-News

شہناز انصاری کے قاتلوں کی شناخت ہوگئی، جلد گرفتار کرلیا جائے گا، پولیس

81

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

نوشہروفیروز پولیس کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی شہناز انصاری کے قاتلوں کی شناخت ہوگئی ہے، گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں ملزمان کو جلد گرفتار کرلیا جائے گا۔

ایس ایس پی نوشہروفیروز ڈاکٹر محمد فاروق کا کہنا ہے کہ شہناز انصاری کی بہن شبانہ کا سسرالیوں سے زمینی تنازع چل رہاہے۔

انہوں نے بتایا کہ شہناز انصاری اپنے بہنوئی زاہد کھوکھر کے چالیسویں پر ان کے گاؤں گئیں تھیں۔ چالیسویں پر زیادہ افراد ساتھ لانے پر شہناز انصاری کی اپنے بہنوئی کے بھائی سے تلخ کلامی ہوئی اور اس کے بیٹوں نے شہناز انصاری پر فائرنگ کردی جس سے وہ جاں بحق ہوگئیں۔

ایس ایس پی کے مطابق شہناز انصاری نے سیکیورٹی کیلئے تحریری درخواست نہیں دی تھی۔ دو روز قبل شہناز انصاری نے بہن کی جائیداد کے تنازعے کے حوالے سے بات کی تھی اور درخواست کی تھی کی بہنوئی کے چالیسویں کے بعد یہ مسئلہ حل کرایا جائے۔

خیال رہے کہ صوبہ سندھ کے ضلع نوشہرو فیروز میں دریا خان مری کے قریب مسلح افراد نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں رکن سندھ اسمبلی شہناز انصاری شدید زخمی ہوگئیں۔ انہیں زخمی حالت میں پیپلز میڈیکل اسپتال نوابشاہ منتقل کیا گیا تاہم وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رکن سندھ اسمبلی شہناز انصاری اپنے بہنوئی کے چہلم میں شرکت کرنے آئی تھیں، فائرنگ کا واقعہ زمین کے تنازع پرپیش آیا۔

پولیس کا یہ بھی کہنا ہے کہ شہناز انصاری کے بہنوئی مرحوم زاہد کھوکر کے بھتیجے نے فائرنگ کی۔

شہناز انصاری کا تعلق پاکستان پیپلز پارٹی سے تھا اور وہ خواتین کی مخصوص نشست پر رکن سندھ اسمبلی منتخب ہوئی تھیں۔

Comments are closed.