Khabardar E-News

بلوچستان: بلدیاتی انتخابات کے انعقاد میں تاخیرکیوں؟ ہائی کورٹ کا استفسار

21

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

کوئٹہ( خبردار ڈیسک ) بلوچستان میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کو ری شیڈول کرنے سے متعلق درخواست کی

سماعت ہوئی

بلوچستان ہائی کورٹ کے چیف جسٹس نعیم اختر افغان، جسٹس روزی خان پر مشتمل دو رکنی بینچ کیس کی

سماعت کی

سماعت کے موقع پر صوبائی الیکشن کمیشنر فیاض حسین مراد، ایڈووکیٹ جنرل آصف ریکی عدالت میں پیش

ہوے

عدالت نے استفسارکیا کہ بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کیوں چاہتے ہیں

بلوچستان: بلدیاتی انتخابات کے انعقاد میں تاخیرکیوں؟ ہائی کورٹ کا استفسار

چیف جسٹس نے کہا کہ یہ ایک جمہوری پراسیس ہے، اس کو مکمل ہونے دیا جاے

تاہم حکومت کی جانب سے کہا گیا کہ صوبائی الیکشن کمیشن کی جانب سے حد بندی باقی ہے،

جس پر چیف جسٹس نے کہا کہ یہ الیکشن کمیشن کا کام ہے، وہ کریں گے

لیکن درخواست گذار نے موقف پیش کیا کہ یہ سب باتیں کر رہے ہیں، لیکن بعد میں مسئلہ پیدا ہوگا

جس پر صوبائی الیکشن کمشنر کی جانب سے کہا گیا کہ ہم بحیثیت ادارہ صوبے میں بلدیاتی انتخابات کرانے

کے لیے تیار ہیں،

جس پر عدالت نے کہا کہ یہ الیکشن کمیشن کمیشن کی ذمہ داری یے، ان کو ادا کرنے دیں،

چیف جسٹس کا ایڈوکیٹ جنرل سے استفسار کیا کہ بلوچستان حکومت کا اس بارے میں کیا موقف یے؟

اس پر ایڈووکیٹ جنرل آصف ریکی نے بتایا کہ بلوچستان حکومت نے سیکرٹری الیکشن کمیشن کو درخواست

دی ہے،

اور الیکشن کمشنر جو کچھ کہہ لیں، ہمیں بحیثیت حکومت بعد میں ان مسائل سے نمٹنا یے،

انہوں نے کہا کہ ہماری بھی یہی درخواست ہے الیکشن کو 3 سے 4 ماہ کے لیے موخر کیا جائے،

یاد رہے کہ اس سے قبل بلوچستان میں بلدیاتی انتخابات کے التواء کے لیے صوبائی حکومت نے بلوچستان

اسمبلی سے ایک قرار داد پاس کی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ 29 مئ کو حالات بلدیاتی انتخابات کے لیے

سازگار نہیں ہیں

واضع رہے کہ صوبائی الیکشن کمیشن نے 29 مئی کو صوبے کے 32 اضلاع میں بلدیاتی انتخابات کرانے کا

اعلان کیا ہے
جبکہ دارلحکومت کوئٹہ اور لسبیلہ میں یہ انتخابات بعد میں ہونگے

Comments are closed.