Khabardar E-News

احتساب کے نام پرانتقام لیاجارہاہے ،شہبازشریف

98

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

عمران خان نے عوام سے جھوٹے وعدے کیے ،ملکی تاریخ میں آج تک جھوٹا اور یوٹرن لینے والا وزیراعظم نہیں دیکھا ، حکومت نے ڈیڑھ سال اپوزیشن کا احتساب کرنے پر لگا دیا
لاکھوں افراد بے روزگار ہو چکے ، ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر کہاں گئے ؟ تحریک انصاف حکومت نے اپنے ڈیڑھ سال میں ریکارڈ قرضے لئے،اپوزیشن لیڈر
لندن(آن لائن) میاں شہبازشریف نے میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ سابق افغان صدر حامد کرزئی میاں نوازشریف کی عیادت کیلئے تشریف لائے اور میاں نوازشریف سے ان کی خیریت دریافت کی اور جلد صحت یابی کیلئے دعا بھی کی۔ میاں شہبازشریف نے میڈیا کے سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے کہا کہ میاں نوازشریف نے اپنے دور حکومت میں پاکستان اور عوام کے لئے تاریخی اقدامات کیے ، نوازشریف نے ملک سے بجلی کا بحران ختم کیا ، جب ہماری حکومت آئی تھی تو 22گھنٹے تک بجلی کی لوڈشیڈنگ کی جارہی تھی اور میاں نوازشریف نے چار سالوں میں لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا اور ہزاروں میگاواٹ بجلی بنائی ، بجلی نہ ہونے کے باعث ملک کی زراعت اور صنعتیں تباہ ہوچکی تھیں جیسے ہی ہم نے بجلی بحران ختم کیا تو صنعت کا پہیہ چل پڑا اور زراعت کا شعبہ بھی بحال ہو گیا ۔انہوںنے کہاکہ ملک کے اصل مسائل غربت ، بے روزگاری ہے حکومت کو ان پر توجہ دینی چاہیے ۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کی مدت ملازمت میں توسیع کے حوالے سے عمران خان نے جو نوٹیفیکیشن جاری کیا تھا اس میں فاش غلطیاں تھیں جن کا اظہار سپریم کورٹ نے کیا اور ہدایت کی کہ ان غلطیوں کو دور کرکے لایا جائے ۔ایک اور سوال پر شہبازشریف نے کہا کہ ملک میں قرضوں کی ذمہ دار کوئی ایک حکومت نہیں ہے یہ مسئلہ 70سال سے چلتا آرہا ہے تاہم تحریک انصاف حکومت نے اپنے ڈیڑھ سال میں ریکارڈ قرضے لئے جو پچھلی حکومتوں کے مقابلے میں کئی فیصد زیادہ ہیں ۔انہوں نے کہاکہ عمران خان نے لوگوں کو ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر دینے کے وعدے کیے تھے کہاں گئیں وہ ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھر ؟ عوام سے جھوٹے وعدے کیے گئے ، میں نے آج تک ملکی تاریخ میں ایسا جھوٹا اور یوٹرن لینے والا وزیراعظم نہیں دیکھا ، عمران خان نے ملک کو تباہ کردیا ہے ، لاکھوں لوگ بے روزگار ہیں ۔ایک اور سوال پر انہوں نے کہاکہ اپوزیشن کیخلاف جھوٹے کیسز بنائے جارہے ہیں اور احتساب کے نام پر انتقام لیا جارہا ہے ، حکومت نے اپوزیشن کیخلاف انتقامی احتساب پر ڈیڑھ سال ضائع کردیا ہے اور کچھ نہیں نکلا اگر حکومت اس ڈیڑھ سال کی آدھی مدت بھی عوامی مسائل کے حل پر توجہ دیتی تو آج ملک کے حالات اتنے خراب نہ ہوتے

Comments are closed.