Khabardar E-News

ہندوستان : کرناٹک میں حجاب کے مسئلے پراختلافات کے بعد تعلیمی ادارے بند

13

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

بنگلور ( خبردار ڈیسک ) ہندوستان کےصوبہ کرناٹک کے کئی حصوں میں ‘حجاب‘ کے سلسلے میں شدت آنے کے ساتھ، ریاستی

حکومت نے منگل کو اگلے تین دنوں کے لیے ہائی اسکول اور کالج بند رکھنے کا اعلان کیا۔

ایک ٹویٹ میں، وزیر اعلی بسواراج بومئی نے کہا: “میں تمام طلباء، اساتذہ اور اسکولوں اور کالجوں کی

انتظامیہ کے ساتھ ساتھ کرناٹک کے لوگوں سے امن اور ہم آہنگی برقرار رکھنے کی اپیل کرتا ہوں۔

میں نے تمام ہائی اسکول اور کالج اگلے تین دن کے لیے بند کرنے کا حکم دیا ہے۔ تمام متعلقہ افراد سے تعاون

کی درخواست ہے۔”

انڈین ایکسپریس کے مطابق اس دوران کرناٹک ہائی کورٹ نے طلباء اور لوگوں سے امن و سکون برقرار رکھنے کی اپیل کی۔

کچھ طالب علموں کی طرف سے دائر درخواستوں کی سماعت کے بعد، معاملے کو مزید سماعت کے لیے بدھ

کو ملتوی کر دیا گیا۔

جسٹس کرشنا ایس ڈکشٹ کی سنگل بنچ نے کہا کہ درخواستوں میں عدالت سے یہ اعلان کرنے کا مطالبہ کیا گیا

ہے

کہ ان کے پاس کالج کے احاطے میں اسلامی عقیدے کے مطابق حجاب پہننے سمیت ضروری مذہبی عبادات پر

عمل کرنے کا بنیادی حق ہے۔ لوگوں سے ہندوستانی آئین پر اعتماد کرنے کو کہتے ہوئے جسٹس ڈکشٹ نے

مشاہدہ کیا کہ صرف کچھ شرارتی لوگ ہی اس معاملے کو بھڑکا رہے ہیں۔

انہوں نے اس بات کی بھی نشاندہی کی کہ احتجاج، نعرے بازی اور ایک دوسرے پر حملہ کرنے والے طلباء

اچھے نہیں ہیں۔

ہندوستان : کرناٹکا میں حجاب کے مسئلے پراختلافات کے بعد تعلیمی ادارے بند

 

اس معاملے پر غور کرتے ہوئے، پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی نے کہا کہ سبھی کو اسکولوں میں

ڈریس کوڈ کی پیروی کرنی چاہیے

اور الزام لگایا کہ ہندوستان کے کچھ سیاست دانوں اور جنونیوں نے اسے ایک مسئلہ بنایا ہے۔

وزیراعلی بسواراج بومائی کے آبائی ضلع ہاویری میں زعفرانی شال پہنے چار نوجوانوں کو پولیس اہلکاروں

کے ساتھ مبینہ طور پر بدتمیزی کرنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا

ایک پولیس افسر نے بتایا کہ ان چاروں میں سے ایک نے ایک ہی کالج میں تعلیم حاصل کی اور زعفرانی شال

پہنے احاطے میں داخل ہو کر کیمپس کے پرامن ماحول کو خراب کرنے کی کوشش کی۔

“اگرچہ ہمارے اہلکاروں نے حالات کو قابو میں کرنے کی کوشش کی، لیکن انہوں نے پولیس کے ساتھ بدتمیزی

کی

اور ہم نے آئی پی سی کی دفعہ 143، 353، 504 اور 506 کے تحت مقدمہ درج کیا ہے،

کورونا وائرس، خواتین میں حجاب کے استعمال میں اضافہ

واضع رہے کہ بنگلور میں اس وقت حالات خراب ہوے جب ایک مسلمان طالبہ حجاب کے ساتھ کالج میں داخل

ہوئی تو بعض انتہاپسند ہندوں نے اس پر نعرہ بازی کی

جس کے جواب میں طالبہ مسکان نے اللہ واکبر کا نعرہ بلند کرکے انکا جواب دیا

تاہم بعد میں کالج انتظامیہ نے طالبہ کو وہاں سے بحفاظت نکالیا

Comments are closed.